پیپلز پارٹی کا وفد آج وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز سے ملاقات کرے گا اور ان کے سامنے پاور شیئرنگ فارمولہ رکھے گا۔— جیو نیوز/فائل۔
  • پیپلز پارٹی نے پنجاب میں کولیشن حکومت کے لیے پاور شیئرنگ فارمولا تیار کر لیا ہے۔
  • پیپلز پارٹی چار وزارتیں اور سینیٹ کی چیئرمین شپ مانگے گی۔
  • پیپلز پارٹی کا وفد آج وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز سے ملاقات کرے گا اور ان کے سامنے تجاویز رکھے گا۔

لاہور: حکمران اتحاد کی اہم جماعت پی پی پی نے پنجاب میں کولیشن حکومت کے لیے پاور شیئرنگ فارمولا تیار کر لیا ہے۔

پاور شیئرنگ کے نئے فارمولے کے مطابق پیپلز پارٹی چار وزارتیں اور سینیٹ کی چیئرمین شپ مانگے گی۔ تاہم صوبے میں گورنر کا عہدہ مسلم لیگ ن کو دینے کا اصولی فیصلہ کیا گیا ہے، روزنامہ جنگ ہفتہ کو رپورٹ کیا.

اس معاملے سے باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کا وفد آج وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز سے ملاقات کرے گا اور ان کے سامنے تجاویز رکھے گا۔

ایک روز قبل قومی اسمبلی کے سپیکر راجہ پرویز اشرف، مخدوم احمد محمود، مخدوم زادہ حسن محمود، قمر زمان کائرہ، حسن مرتضیٰ نے پیپلز پارٹی کے سینئر وائس چیئرمین اور سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی سے عشائیہ پر ملاقات کی اور پاور شیئرنگ فارمولے پر تبادلہ خیال کیا۔

پارٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ سینئر وزیر کے لیے حسن مرتضیٰ کا نام فائنل کر لیا گیا ہے جبکہ علی حیدر گیلانی، ممتاز چانگ اور سید عثمان محمود کو صوبائی کابینہ میں شامل کیا جائے گا۔

تاہم چیئرمین سینیٹ کے لیے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کا نام فائنل کر لیا گیا ہے۔

حمزہ شہباز نے کافی تاخیر کے بعد گزشتہ ہفتے اپنے عہدے کا حلف اٹھایا اور وہ کابینہ کے بغیر کام کر رہے ہیں۔

Written by Muhammad Bilal

Subscribe For Daily Latest Jobs