وزیر اعظم شہباز شریف خیبرپختونخوا کے ضلع شانگلہ میں عوامی اجتماع سے خطاب کر رہے ہیں۔ – ریڈیو پاکستان
  • وزیر اعظم شہباز شریف نے خیبر پختونخوا کے ضلع شانگلہ کے علاقے بشام میں مختلف ترقیاتی منصوبوں کے لیے 2 ارب روپے کے پیکج کا اعلان کیا۔
  • وزیر اعظم نے کے پی سے وعدہ کیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ صوبے کو گندم کی خریداری سے متعلق کوئی شکایت نہ ہو۔
  • اگر مجھ سے کوئی غلطی ہوئی تو میں عوام کو اپنا گواہ بناؤں گا اور ان سے معافی مانگوں گا، وزیراعظم۔

شانگلہ: وزیر اعظم شہباز شریف نے ہفتہ کے روز خیبرپختونخوا کے عوام سے کہا کہ اگر ان کے وزیر اعلیٰ نے گندم کی قیمتیں نہ کم کیں تو وہ اپنے کپڑے بیچ کر قیمت کم کرنے کو یقینی بنائیں گے۔

سوات کے شہر شانگلہ میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ گندم اسی قیمت پر فروخت کی جائے گی جو پنجاب میں عوام خرید رہے ہیں۔

“میں کے پی کے وزیراعلیٰ سے گندم کی قیمت کم کرنے کی درخواست کروں گا۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے گندم کی قیمت نہ کم کی تو میں اپنے کپڑے بیچ کر گندم کی قیمت کم کردوں گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر وزیراعلیٰ ان کی درخواست پر راضی ہوجاتے ہیں تو وہ ان کا شکریہ ادا کریں گے۔

وزیراعظم نے کے پی کے عوام سے وعدہ کیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ صوبے کو گندم کی خریداری سے متعلق کوئی شکایت نہیں ہے۔

“میں شہباز شریف ہوں میں آپ سے جھوٹ نہیں بولوں گا،” انہوں نے ہجوم سے کہا، انہوں نے مزید کہا کہ ان کے پیشرو، جو وزیر اعظم کی کرسی پر بیٹھے تھے، لوگوں سے “صرف جھوٹ” بولا۔

وزیراعظم نے کہا کہ اگر مجھ سے کوئی غلطی ہوئی تو میں عوام کو اپنا گواہ بناؤں گا اور ان سے معافی مانگوں گا۔

پی ٹی آئی پر اپنا حملہ جاری رکھتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ وہ تین ہفتے قبل حکومت کے سربراہ بنے اور ملک کا دورہ کیا۔ انہوں نے کے پی میں پی ٹی آئی کی زیرقیادت حکومت سے یہ بھی پوچھا کہ انہوں نے اپنے دور حکومت میں کتنے ہسپتال اور مفت آپریشن کئے۔

وزیر اعظم شہباز نے اعلان کیا کہ “ہم کے پی سمیت پورے پاکستان میں مفت ادویات فراہم کریں گے۔” انہوں نے مزید کہا کہ مرکز میں پی ٹی آئی کی حکومت نے گزشتہ چار سالوں میں ریکارڈ قرضے لیے لیکن اعلان کردہ نئے منصوبوں پر ایک اینٹ بھی نہیں رکھی گئی۔

ضرورت سے زیادہ قرضوں کی وجہ سے ملکی معیشت تباہ ہو چکی ہے۔ گزشتہ چار سالوں میں یہ بدترین حکومت تھی،‘‘ وزیراعظم نے کہا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان اپنی حکومت کی کامیابیوں پر بات نہیں کر رہے کیونکہ ان کے پاس کہنے کو کچھ نہیں ہے۔

قرضوں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف نے عوام سے کہا کہ وہ اپنے دل پر ہاتھ رکھ کر پوچھیں کہ ملک کب تک قرض مانگتا رہے گا۔

’’ہم کب تک بھیک مانگتے رہیں گے؟ بھیک مانگنے سے ہمیں زندگی نہیں موت ملتی ہے،‘‘ وزیراعظم نے کہا۔

اپنے خطاب میں وزیراعظم نے علاقے میں 132kv گرڈ سٹیشن پر تین ماہ کے اندر تعمیراتی کام مکمل کرنے کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے ضلع شانگلہ کے نوجوانوں کے لیے میڈیکل کالج کے قیام کا بھی اعلان کیا اور علاقے میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے 2 ارب روپے کی گرانٹ کا اعلان کیا۔

Written by Muhammad Bilal

Subscribe For Daily Latest Jobs